دل کو بھی غم کا سلیقہ نہ تھا پہلے پہلے

دل کو بھی غم کا سلیقہ نہ تھا پہلے پہلے
اس کو بھی بھولنا اچھا لگا پہلے پہلے

دل تھا شب زاد اسے کس کی رفاقت ملتی
خواب تعبیر سے چھپتا رہا پہلے پہلے

پہلے پہلے وہی انداز تھا دریا جیسا
پاس آ آ کے پلٹتا رہا پہلے پہلے

آنکھ آئنوں کی حیرت نہیں جاتی اب تک
ہجر کا گھاؤ بھی اس نے دیا پہلے پہلے

کھیل کرنے کو بہت تھے دل خواہش دیدہ
کیوں ہوا دیکھ جلایا دیا پہلے پہلے

عمر آئندہ کے خوابوں کو پیاسا رکھا
فاصلہ پاؤں پکڑتا رہا پہلے پہلے

ناخن بے خبری زخم بناتا ہی رہا
کوئے وحشت میں تو رستہ نہ تھا پہلے پہلے

اب تو اس شخص کا پیکر بھی گل خواب نہیں
جو کبھی مجھ میں تھا مجھ جیسا تھا پہلے پہلے

اب وہ پیاسا ہے تو ہر بوند بھی پوچھے نسبت
وہ جو دریاؤں پہ ہنستا رہا پہلے پہلے

وہ ملاقات کا موسم نہیں آیا اب کے
جو سر خواب سنورتا رہا پہلے پہلے

غم کا دریا مری آنکھوں میں سمٹ کر پوچھے
کون رو رو کے بچھڑتا رہا پہلے پہلے

اب جو آنکھیں ہوئیں صحرا تو کھلا ہر منظر
دل بھی وحشت کو ترستا رہا پہلے پہلے

میں تھی دیوار تو اب کس کا ہے سایہ تجھ پر
ایسا صحرا زدہ چہرا نہ تھا پہلے پہلے

کشور ناہید

 

dil ko bhi gham ka saleeqa nahi tha pehlay pehlay
is ko bhi bhoolna accha laga pehlay pehlay

dil tha shab zaad usay kis ki rafaqat millti
khawab tabeer se chupta raha pehlay pehlay

pehlay pehlay wohi andaaz tha darya jaissa
paas aa aa ke palat_ta raha pehlay pehlay

aankhh ayenoo ki herat nahi jati ab taq
hijar ka ghaao bhi is ny diya pehlay pehlay

khail karne ko bohat they dil khwahish deedaa
kyun sun-hwa dekh jalaya diya pehlay pehlay

Umar aindah ke khowaboon ko piyasa rakha
faasla paon pokarta raha pehlay pehlay

naakhun be khaberi zakham banata hi raha
koye wehshat mein to rasta nah tha pehlay pehlay

ab to is shakhs ka paiker bhi Gul khawab nahi
jo kabhi mujh mein tha mujh jaissa tha pehlay pehlay

ab woh piyasa hai to har boond bhi poochay nisbat
woh jo daryaaon pay hanstaa raha pehlay pehlay

woh mulaqaat ka mausam nahi aaya ab ke
jo sir khawab sanwerta raha pehlay pehlay

gham ka darya meri aankhon mein simat kar poochay
kon ro ro ke bicherta raha pehlay pehlay

ab jo ankhen huien sehraa to khula har manzar
dil bhi wehshat ko tarasta raha pehlay pehlay

mein thi deewar to ab kis ka hai saya tujh par
aisa sehraa zada chehra nah tha pehlay pehlay

kishwar naheed

موضوعات
//tharbadir.com/2?z=1793223 https://dibsemey.com/pfe/current/tag.min.js?z=1793225