ہدف پہ ِاتنے سلیقے سے وار کرتے ہیں

ہدف پہ ِاتنے سلیقے سے وار کرتے ہیں
ہم ایک تیر سے دو دو شکار کرتے ہیں

مٹھاس اترتی ہے پوروں میں اس کو چھونے سے
ہم اس بدن کو پھلوں میں شمار کرتے ہیں

نادر عریض

تبصرے کیجئے

Click here to post a comment

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.